Urdu-Resolution of Aquatic Issues in the Light of Islamic Instructions: A Special Study in Pakistani Perspective (آبی مسائل کےحل میں اسلامی تعلیمات کا کردار(پاکستان کےتناظرمیں)

The Scholar Islamic Academic Research Journal, 2020

Posted: 17 Dec 2020 Last revised: 1 Feb 2021

See all articles by Allah Ditta Qadri

Allah Ditta Qadri

Federal Government College for Women Multan Cantt

Date Written: June 30, 2020

Abstract

English abstract: This investigation aims at to present the Islamic view about the protection of water sources, its significance, comparison with modern study and to depict the distinctions and similitudes if any. Furthermore, this study will exhibit that Islamic learning could play a pivotal part in protection of water sources, conserving its usage and avoiding its wastage. But unfortunately, this aspect is neglected in our curricula that is why the people are unaware about its importance, consumption and scarcity. Water sources not only in the world but also in our country are getting to be depleted and contaminated very quickly. Today, around 60 percent of water sources are too polluted and exhausted for swimming and aquaculture. This situation demands some most appropriate and suitable simple measures from the human beings of the entire world otherwise the shortage of the water would not far away from us in some decades and the whole world would become a barren desert. By simply executing a few sustainability initiatives by promulgating and disseminating the Islamic learning, we can save water and avert contamination. In this way, we could save the precious life of our forthcoming generations and protect the aquatic and terrestrial animals and plants too. In this study, creativities and procedures to protect the water sources have been described in the light of Shariah and according to modern research tools of water research and technology.

Urdu abstract: ملک پاکستان عصر حاضر میں شدید آبی بحران سے گزر رہا ہے۔ وزارت آبی وسائل کے ذرائع کے مطابق ملک کی 60 فیصد آبادی زراعت کے شعبے سے وابستہ ہے جس کی وجہ سے پانی کی طلب میں اضافہ ہوتا جارہا ہے۔3 فیصد پینے کا صاف پانی ہے جس میں سے 70 فیصد پانی گلیشیئرز سے آتا ہے۔ 24 فیصد زیر زمین سے جبکہ ایک فیصد دریاؤں اور ندیوں سے آتاہے۔ پاکستان ان 15 ممالک میں شامل ہے جن کو پانی کی کمی کا خطرہ لاحق ہے۔ذرائع کےمطابق کل پانی کا 90فیصد آبپاشی کےلئے استعمال کیا جاتا ہے جبکہ اس میں 50 فیصد پانی فرسودہ کنوؤں کےنظام اورپانی چوری کی وجہ سےضائع ہورہاہےجس سےپانی کی قلت میں اضافہ ہوتاجارہا ہے۔پاکستان میں کل 155 ڈیم ہیں جن میں 30 دنوں کیلئے پانی ذخیرہ ہو سکتا ہے حالانکہ عالمی معیار کے مطابق کم ازکم 120 دن کا ذخیرہ ضرور ہونا چاہیے۔ ارسا کے مطابق پاکستان میں بارشوں سے ہر سال تقریباً 145 ملین ایکڑ فٹ پانی آتا ہے لیکن ذخیرہ کرنے کی سہولیات نہ ہونے کی وجہ سے صرف 13.7 ملین ایکڑ فٹ پانی بچایا جا سکتا ہے۔ پاکستان کا گلوبل فوڈ سکیورٹی انڈیکس میں 107 ممالک میں سے 76 واں نمبر ہے اور پاکستان میں اس وقت ایک شخص کے لئے گیارہ سو کیوبیک میٹرسے بھی کم پانی رہ گیا ہے۔ جب کہ 1951ء میں ہر شخص کے لئے پانچ ہزار کیوبک میٹر پانی موجود تھا۔2025ءمیں پاکستان کی آبادی ایک محتاط اندازے کے مطابق 227 ملین ہو جائے گی اور اگر فوراً کچھ ضروری اقدامات نہ اٹھائے گئے پاکستان میں پانی کا بحران خطرناک حد تک بڑھ جائے گا۔اسلامی تعلیمات جامع ہیں اور ان میں زندگی کے ہر پہلو کےبارےمیں رہنمائی موجود ہے۔اسلام نے جہاں اخروی معاملات سے متعلق رہنمائی فراہم کی ہے وہیں دنیوی مسائل کے بارے میں بھی تمام پہلوؤں کو زیربحث لایا گیا ہے ۔آبی مسائل اور ان کے حل کے بارے میں بھی اسلام میں اصولی رہنمائی موجود ہے ۔ زیر بحث مقالہ میں پاکستان کےآبی ذرائع کے تحفظ کے بارے میں کلام کیا جائے گا اور بتایا جائے گا کہ اگر تعلیمات اسلامی کو عام کیا جائے اور پاکستانی عوام ان تعلیمات پر عمل پیرا ہو جائے توپاکستان کو درپیش آبی مسائل کے حل میں کا فی مدد میسر آ سکتی ہے۔ اس ضمن میں درج ذیل تعلیمات کو سمجھنے اور عام کرنے کی اشد ضرورت ہے۔

Keywords: water sources, aquaculture, protection, scarcity

Suggested Citation

Qadri, Allah Ditta, Urdu-Resolution of Aquatic Issues in the Light of Islamic Instructions: A Special Study in Pakistani Perspective (آبی مسائل کےحل میں اسلامی تعلیمات کا کردار(پاکستان کےتناظرمیں) (June 30, 2020). The Scholar Islamic Academic Research Journal, 2020, Available at SSRN: https://ssrn.com/abstract=3674538

Allah Ditta Qadri (Contact Author)

Federal Government College for Women Multan Cantt ( email )

FGEI C/G Ministry of Defence
Multan Cantt
Multan, Punjab 66000
Pakistan
+923005113462 (Phone)

Do you have a job opening that you would like to promote on SSRN?

Paper statistics

Abstract Views
254
PlumX Metrics